كلمة النائب العام

 

​اٹارنی جنرل / حسن سعید محيمد


حکومت کے 2015 – 2017 کے اسٹریٹجک فریم ورک کے مطابق اور شيخ/ سعود بن صقر القاسمي رأس الخيمة کے حاكم حفظه الله اور شيخ محمد بن سعود بن صقر القاسمي حفظه الله رأس الخيمة کے ولي عهد اور جوڈیشل کونسل کے چیئرمین کے ہدایات کے مطابق عدلیہ کی خدمات کو بہتر بنانے کے ليے ہيں جو اس کے وفاقی ہم منصب کے ساتھ اتفاق کرتے ہيں. اس ليے ہم اپنے ڈيپارٹمنٹ کي ويب سائٹ کا اغاز کررہے ہيں جس ميں عدلیہ کے الیکٹرانک خدمات جس کے ذريعہ ہمارے کسٹمرز کا وقت بچے گا اور کاروائي کو اسان بنايا جائيگا اور دونوں أطراف کے ليے مطلوبہ معلومات دستياب ہوگي جس سے خدمات کے معيار کو بہتر بنايا جائيگا اور کسٹمرز کي رضامندي حاصل ہوگي، اور مستقبل ميں ہماري ٹيم کے ذريعہ ان خدمات کو اور بھي بہتر بنايا جائيگا کيونکہ پبلک پراسیکیوشن شيخ محمد بن سعود بن صقر القاسمي حفظه الله رأس الخيمة کے ولي عهد اور جوڈیشل کونسل کے چیئرمین کے ہدایات کے کو اپنا نقطہ نظر رکھا ہے جو مندرجہ ذیل ان کے قول ميں ہيں:

متحدہ عرب امارات کامیابی سے کامیابی تک

ایک ايسا پہیا ہے جو اپنے مقصد کي طرف بڑھنا نہيں چھوڑتا جو اسمان کو چھوتے ہوں

اور جو سرحدوں یا رکاوٹوں کو نہیں پہچانتا ہوں

 

چانسلر / حسن سعید محيمد

 راس الخیمہ کے اٹارنی جنرل


​​​